Clicky

تازہ ترین خبر
ہوم / اہم موضوعات / فکسنگ اسکینڈل:الزامات لگانے والے خود پھنس گئے

فکسنگ اسکینڈل:الزامات لگانے والے خود پھنس گئے

پی ایس ایل اسپاٹ فکسنگ ’پانامہ اسکینڈل‘سے بھی بڑا کیس بن گیا ہے جس میں ایف آئی اے کو تحقیقات سے روکنے والا کرکٹ بورڈتاحال خود بھی معاملے کو منطقی انجام کو پہنچانے میں ناکام ہے۔

کیس کے طویل ہونے اوراینٹی کرپشن کوڈکی خلاف ورزی کرنے والے محمد عرفان پر بظاہر ایک سال جبکہ عملی طورپر محض چھ ماہ کی پابندی عائد کرنا معاملے کو مشکوک بنارہاہے۔ اس حوالے سے بورڈپراُٹھنے والی اُنگلیاں مزید بڑھ رہی ہیں۔ پاکستان میں کھیلوں کا معروف میگزین ’اسپورٹس لنک‘ بھی اس حوالے سے اپنے سلسلے ’خبروں سے آگے میں‘اس پرتحفظات ظاہر کرچکاہے۔

اب عامر سہیل بھی محسوس کرنے لگے ہیں کہ دال میں کچھ کالاہے اور بورڈکا ’ٹھوس شواہد‘کادعویٰ محض شوشہ ہی ہے۔ میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے سابق ٹیسٹ کرکٹر کا کہناتھا کہ پی سی بی کا دعویٰ اگر درست ہوتا تو اب تک کوئی فیصلہ سامنے آجاتا،لگتا یہی ہے کہ الزامات لگانے والے خود پھنس گئے ہیں۔

کھلاڑیوں پر اگر الزامات ثابت نہیں ہوتے تو غیرذمہ داری کا مظاہرہ کرنے پر نجم سیٹھی کو استعفیٰ دینا پڑے گا ۔میرا سیدھا سا سوال یہ ہے کہ اگر ثبوت حاصل کرنے کیلئے کھلاڑیوں سے دوبارہ تحقیقات ہی کرنا تھیں توایف آئی اے کو منت سماجت کرکے تحقیقات سے کیوں روکا گیا؟

اگر شرجیل خان اور خالدلطیف کے خلاف ٹھوس شواہد نہیں تھے اور صرف شک ہی تھا تو اُنہیں معطل کرکے دُنیابھر میں کیوں ملک وقوم کی جگ ہنسائی کرائی گئی؟اُنہیں بھی محمد عرفان کی طرح وارننگ دے کر ٹورنامنٹ کھیلنے دیا جاتا۔بعدازاں تحقیقات کرکے ہی فیصلہ کیاجاتا۔

عامر سہیل نے اس کیس پرمزیدشک کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ اس کیس میں ہمیں یہ بھی دیکھنا ہوگا کہ کھلاڑیوں کا جس شخص سے رابطہ ہواتھا ،وہ بکی تھا بھی نہیں؟

loading...

یہ متعلقہ مواد بھی پڑھیں

اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل: پی سی بی کیلئے دُہری مشکلات کھڑی ہوگئیں

پاکستان سپر لیگ کے دوسرے ایڈیشن کے دوسرے روز منظر عام پر آنے والے اسپاٹ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے