Clicky

تازہ ترین خبر
ہوم / اہم موضوعات / ہوٹل میں لڑکی بلانے والا پاکستانی کرکٹرکون ہے؟

ہوٹل میں لڑکی بلانے والا پاکستانی کرکٹرکون ہے؟

بنگلہ دیش پریمیئرلیگ ایکبارپھر اسکینڈلز کی زد میں آچکی ہے ،مالی تنازعات کا معاملہ ابھی مکمل طورپر ختم ہی نہیں ہوا کہ خواتین مہمانوں کوکھلاڑیوں کی جانب سے ہوٹل کمروںمیں بلانے کا تنازعہ کھڑا ہوگیاہے۔

گزشتہ دنوں لیگ کی جانب سے دومقامی انٹرنیشنل کرکٹرزالامین حسین اور صابررحمن پر بھاری جرمانے عائد کئے گئے تھے جس کی وجہ اُن کی جانب سے خواتین مہمانوں کو ہوٹل کے کمرے میں بلاناتھی۔واضح رہے کہ لیگ میں میچ فکسنگ کی رپورٹس سامنے آنے کے بعد اینٹی کرپشن یونٹ محترک ہوچکاہے۔

اس وقت پی بی ایل میں عمراکمل اور شاہد آفریدی سمیت 15 پاکستانی کرکٹرز کھیل رہے ہیں
اس وقت پی بی ایل میں عمراکمل اور شاہد آفریدی سمیت 15 پاکستانی کرکٹرز کھیل رہے ہیں

اینٹی کرپشن یونٹ کو اطلاعات ملی ہیں کہ بکیز اپنی تربیت یافتہ خواتین کو کرکٹرزکے پاس بھیج رہے ہیں اوراُن سے معلومات حاصل کرنے سمیت ’’معاملات‘‘بھی طے کرنے کی کوشش کررہے ہیں ۔جس کے بعد تمام کھلاڑیوں کو اپنے ہوٹل کمرے میں خواتین مہمانوں کو بلانے سے روک دیاگیاہے۔

اطلاعات کے مطابق لیگ انتظامیہ کی جانب سے روکے جانے کے باوجود ایک پاکستانی کرکٹرنے ایک لڑکی کو ہوٹل میں بلایا جس کی اطلاع ملتے ہی انتظامیہ حرکت میں آگئی ۔جس کے بعد نہ صرف لڑکی کو ہوٹل کے کمرے سے باہر نکالاگیا بلکہ کھلاڑی کی سرزنش بھی کی گئی۔

بی پی ایل کی انتظامیہ نے پہلے ہی تنازعات سے بھری لیگ کونئے تنازعے میں الجھنے سے روکنے کیلئے اس معاملے کو دبا دیا ہے۔پاکستانی میڈیاتک یہ ’’خبر‘‘ پہنچنے کے بعد یہ جاننے کی کوششیں تیزتر ہوگئی ہیں کہ ’’لڑکی کوہوٹل کے کمرے میں بلانے والا پاکستانی کرکٹرآخر کون ہے؟

واضح رہے کہ بی پی ایل کے رواں سیزن میں پاکستانی کرکٹرزمیںعمراکمل راجشاہی کنگز،شاہد آفریدی،ناصر جمشیداورانور علی رنگپوررائیڈز، محمد نوازاوررومان رئیس بریسل بلز،شعیب ملک چٹاکانگ ویکنز،احمد شہزاد،عمادوسیم، خالد لطیف ،شاہ زیب حسن ،سہیل تنویر اوراشعرزیدی کومیلا وکٹورینز ،جنیدخان اور محمد اصغرکھلنا ٹائٹنزکی جانب سے کھیل رہے ہیں۔

پاکستانی وعالمی میڈیا اس ’’کھوج‘‘میں لگاہوا ہے کہ کسی طرح لڑکی کو ہوٹل میں بلانے والے پاکستانی کرکٹرکا نام اور اس واقعے سے متعلق دیگر معلومات حاصل کی جاسکے تاہم ابھی تک کسی کو اس میں کامیابی نہیں مل سکی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے