Clicky

تازہ ترین خبر
ہوم / اہم موضوعات / 5ریکارڈزجو تیسرے پاک-ویسٹ انڈیزمیچ میں ٹوٹ گئے

5ریکارڈزجو تیسرے پاک-ویسٹ انڈیزمیچ میں ٹوٹ گئے

پاکستان اور ویسٹ انڈیزکے درمیان ٹرینڈاڈمیں کھیلے گئے تیسرے ٹوئنٹی20میچ میں میزبان سائیڈنے اپنے اوپنر ایون لیوس کی 91رنزکی ریکارڈساز اننگزکے سبب 31 گیندیں قبل سات وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔اس میچ میں بننے اور ٹوٹنے والے ریکارڈزکی ذیل میں پیش کی جارہی ہے۔

کامران اور بابراعظم نے نیاشراکتی ریکارڈ قائم کردیا

پہلے اوورمیں 4کے مجموعی اسکورپر دووکٹیں گرنے کے بعد کامران اور بابراعظم نے ذمہ دارانہ کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے 88رنز کی شراکت قائم کی جو چار یا اس سے کم اسکورپر دو وکٹیں گرنے کے بعد اگلی (تیسری) وکٹ کیلئے پاکستان کی جانب سے نہ صرف سب سے بڑی شراکت ہے بلکہ اولین ففٹی شراکت بھی ہے۔اس سے قبل اس صورتحال کے بعد تیسری وکٹ پر سب سے بڑی شراکت محض 36رنزپر مشتمل تھی جو 20 فروری 2010ء کو دبئی کے مقام پر شعیب اور عمراکمل نے انگلینڈکے خلاف قائم کی تھی۔

واضح رہے کہ چار سے کم اسکورپر دو وکٹیں گنوانے کی شرط ہٹاکر یہ تیسری وکٹ پر قائم ہونے والی تیسری بڑی شراکت ہے۔ جس کے آگے حفیظ اور عمراکمل کے درمیان 102رنزاور کامران اکمل اور اکمل کے درمیان 96رنزکی شراکتیں موجود ہیں۔

پاکستان50بار140سے کم اسکورپرآئوٹ ہونیوالی پہلی ٹیم بن گئی

پاکستان کرکٹ ٹیم ویسٹ انڈیزکے خلاف تیسرے ٹوئنٹی20 میچ میں 137/8رنزکے اسکورتک محدود رہی جو اُس کا اپنی ٹوئنٹی20 تاریخ میں 140یا اس سے کم رنزکا 50واں ٹوٹل ہے جو کسی بھی ٹیم کے ایسے کم ترین اسکورز ہیں۔پاکستان 50بار140یا کم اسکورپر آئوٹ ہونے والی دُنیاکی پہلی ٹیم بن گئی ہے۔

اس فہرست میں دوسرے نمبرپر آئرلینڈ اور سری لنکا موجود ہیں جو 44،44بار اس صورتحال سے دوچار ہوئی ہیں ۔پاکستان ٹیم جن 50میچوں میں 140یا کم اسکورپر آئوٹ ہوئی ہے ، اُن میں سے 22میں فتح حاصل کی ہے جبکہ 28میں اُسے ناکامی کا سامناکرنا پڑاہے۔

ویسٹ انڈیزنے پہلی بارپاکستان کیخلاف ہدف عبورکیا

ویسٹ انڈین کرکٹ ٹیم نے ایون لیوس کی دھواں دار بیٹنگ کی بدولت پاکستان کے خلاف تیسرے ٹوئنٹی20میچ میں138 رنزکا ہدف محض تین وکٹیں گنواکر31 گیندیں قبل ہی حاصل کرلیا جو پہلا موقع تھا جب ویسٹ انڈیزنے پاکستان کے خلاف ہدف عبورکیا وگرنہ اس سے قبل جب بھی اُسے تین مواقعوں پر پاکستان کیخلاف ہدف ملا تو وہ اُسے عبورکرنے میں ناکام رہی۔

علاوہ ازیں ،یہ گیندیں باقی رہ جانے کے اعتبار سے پاکستان کے خلاف کسی بھی ٹیم کی پانچویں بڑی فتح بھی ہے۔

پاکستان کیخلاف بڑی انفرادی اننگز اور زیادہ چھکے

ایون لیوس نے پاکستان کے خلاف تیسرے ٹوئنٹی20میچ میں 51 گیندوں پر پانچ چوکوں اور 9 چھکوں کی مددسے 91رنزکی شاندار اننگزکھیلی جو ٹوئنٹی20مقابلوں میں دُنیاکے کسی بھی بلے باز کی پاکستان کے خلاف سب سے بڑی انفرادی اننگزہے۔اس سے قبل یہ اعزاز نیوز ی لینڈکے مارٹن گپٹل کے نام تھا جس نے 2016ء میں ہملٹن کے مقام پر 58 گیندوں پر 9 چوکوں اور چار چھکوں سمیت ناقابل شکست87* رنزبنائے تھے۔

91رنزکی اپنی ریکارڈساز اننگزکے دوران ایون لیوس نے 9 چھکے بھی لگائے جو پاکستان کے خلاف ایک ٹوئنٹی20میچ میں دُنیاکے کسی بھی بلے باز کے سب سے زیادہ چھکے ہیں۔اس سے قبل یہ منفرد ریکارڈ بھارت کے یووراج سنگھ کے نام تھاجس نے 2012ء میں احمدآبادکے مقام پر گرین شرٹس کے خلاف اپنی72رنزکی اننگزکے دوران سات بار گیند بائونڈری لائن کے باہرپھینکی تھی۔

ایون لیوس کا دوسرامین آف دی میچ ایوارڈ

91رنزکی شاندار اننگزکھیلنے پر ایون لیوس کو میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا جو اُن کا مجموعی طورپردوسرا جبکہ پاکستان کے خلاف پہلا مین آف دی میچ ایوارڈ ہے۔علاوہ ازیں،یہ کسی بھی ویسٹ انڈین کرکٹر کا پاکستان کے خلاف مجموعی طورپر تیسرا مین آف دی میچ ایوارڈ ہے ،اس سے قبل ڈیون بشو اور ڈیوائن براوو نے یہ اعزاز حاصل کیا تھا۔

loading...

یہ متعلقہ مواد بھی پڑھیں

جمیکا ٹیسٹ : 11اوورزکے کھیل میں 4 ریکارڈزٹوٹ گئے

پاکستان اور ویسٹ انڈیزکے درمیان جمیکا میں کھیلے جارہے پہلے ٹیسٹ کے دوسرے روزبارش کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے