Clicky

ہوم / اہم موضوعات / دوسراپاک-ویسٹ انڈیزٹیسٹ، پاکستان ٹیم کے مثبت اورمنفی پہلو

دوسراپاک-ویسٹ انڈیزٹیسٹ، پاکستان ٹیم کے مثبت اورمنفی پہلو

پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے درمیان تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز کا دوسرا میچ آج (30اپریل) سے برج ٹائون میں شروع ہورہاہے۔

پاکستان ٹیم اگر آج شروع ہونے والے میچ میں کامیابی حاصل کرلیتی ہے تو وہ کیربیئن سرزمین پر اپنی تاریخ کی اولین ٹیسٹ سیریز جیتنے میں کامیاب ہوجائے گی۔اس سے قبل پاکستان ٹیم وہاں آٹھ کوششوں میں کوئی ٹیسٹ سیریز نہیں جیت سکی ہے۔

پاکستان ٹیم دوسرے ٹیسٹ میں کافی اعتماد کے ساتھ اُترے گی کیونکہ وہ بارش کے سبب کھیل کا بیشترحصہ ہونے کے باوجود پہلا ٹیسٹ جیت کر سیریزمیں ایک، صفر سے برتری حاصل کرچکی ہے جبکہ اُس کے اہم ترین فاسٹ بولر محمدعامر نے پہلا جمیکا ٹیسٹ میں کیرئیربیسٹ کارکردگی دکھاکردوبارہ اعتماد اور فارم حاصل کرلی ہے۔

حریف ٹیم کی دوسری اننگزکے ہیرویاسرشاہ بھی اپنے جوبن پرہیں جنہوں نے جمیکا ٹیسٹ کی دوسری اننگزمیں 63رنزکے عوض چھ وکٹیں حاصل کرکے مین آف دی میچ ایوارڈ حاصل کرنے سمیت پاکستان کو اہم کامیابی دلائی تھی۔ مڈل آرڈر میں دونوں اننگزمیں ناٹ آئوٹ مصباح الحق نے*99اور22*رنزبناکر اپنی کھوئی ہوئی فارم واپس پالی ہے جبکہ یونس خان بھی 10ہزار رنزکے دبائو سے باہر نکل چکے ہیں۔

پاکستان کیلئے واحد منفی پہلو اُس کے اوپنرزکارنزنہ بناپاناہے۔پہلے جمیکا ٹیسٹ میں اظہرعلی 15اور1جبکہ احمد شہزاد 31 اور6 رنزبناکر آئوٹ ہوئے تھے۔

ٹیموں میں تبدیلیاں:
ویسٹ انڈیز دوسرے ٹیسٹ کیلئے اگرچہ ٹیم میں قدرے تبدیلی کی حق بجانب ہوگی لیکن اس کا امکان کم ہے۔توقع ہے کہ وہ پہلے ٹیسٹ کی پلیئنگ الیون ہی دوسرے ٹیسٹ میں بھی اُتارے گا جبکہ پاکستان ٹیم میں تبدیلی کا زیادہ امکان نہیں ہے البتہ کپتان مصباح الحق کہہ چکے ہیں کہ کنڈیشنزکو دیکھتے ہوئے شاید دو لیگ اسپنرزکے ساتھ میدان میں اُتریں۔اس صورت میں شاداب خان کا ٹیسٹ ڈیبیو ہوسکتا ہے۔

کنڈیشنز:
برج ٹائون کی سخت اور تیز آئوٹ فیلڈپرزیادہ رنزبننے کا امکان ہے جبکہ ویسٹ انڈین کپتان جیسن ہولڈرکا خیال ہے کہ میچ کے آغاز پر ہی خشک دکھائی دینے والی وکٹ پر اسپن بولنگ زیادہ موثر ہوگی۔اگرچہ پہلے ٹیسٹ کی نسبت دوسرے ٹیسٹ میں موسم بہتررہے گا تاہم میچ کے چوتھے اور پانچویں دن بارش کاامکان موجود ہے۔

اعدادوشمار:
اگر پاکستان ٹیم یہ ٹیسٹ جیتنے میں کامیاب ہوجاتی ہے تو وہ تاریخ میں پہلی بار ویسٹ انڈین سرزمین پر ٹیسٹ سیریز جیتے گی جبکہ مصباح الحق یہ اعزاز پانے والے پہلے پاکستانی کپتان ہوں گے۔

1993ء کے بعد سے پاکستان ٹیم کا ویسٹ انڈین ٹیم پر مجموعی طورپر پلڑا بھاری ہے جس نے اس عرصے میں کھیلے گئے 19 میں سے 12ٹیسٹ جیتے ہیں جبکہ اس دوران اُسے صرف چار ٹیسٹ میں ناکامی ہوئی ہے اوردیگر تین ٹیسٹ ڈرا ہوئے ہیں۔

loading...

یہ متعلقہ مواد بھی پڑھیں

برج ٹائون میں ٹیسٹ نہ جیتنے کی پاکستانی روایت برقرار

188رنزکے ہدف کے تعاقب میں بیٹنگ لائن کی بدترین ناکامی سے دوچار ہوکرپاکستان ٹیم برج …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے