Clicky

ہوم / اہم موضوعات / پاکستان کیلئے عالمی نمبر3 بننے کا موقع

پاکستان کیلئے عالمی نمبر3 بننے کا موقع

پاکستان کرکٹ ٹیم کو دورۂ ویسٹ انڈیزمیں آئی سی سی ٹوئنٹی رینکنگ میں تین درجے ترقی پاکر عالمی نمبر3بننے کا موقع مل گیا ہے جو اپنی تاریخ میں پہلی بار کسی ٹیم کے خلاف چار ٹوئنٹی20میچوں کی باہمی سیریزکھیل رہی ہے۔

گرین شرٹس26مارچ سے ویسٹ انڈیزکے خلاف چار ٹوئنٹی20انٹرنیشنل میچوں کی سیریزکاآغازکرے گی۔اپنی تاریخ میں کسی بھی ٹیم کے خلاف پہلی بار چار ٹوئنٹی20میچوں کی باہمی سیریزکھیلنے والی پاکستانی ٹیم اس سیریز سے قبل آئی سی سی ٹوئنٹی20 رینکنگ میں 113پوائنٹس کے ساتھ چھٹے نمبرپر موجود ہے جبکہ تین پوائنٹس کے فرق سے ورلڈچیمپئن کیربیئن سائیڈ چوتھے نمبرپر موجودہے۔

اگرچہ گزشتہ سال بھارت میں منعقدہ ورلڈٹی ٹوئنٹی 2016ء جیتنے والی ویسٹ انڈین ٹیم میں بڑے پیمانے پر تبدیلیاں آچکی ہیں جس میں کپتان کی تبدیلی بھی شامل ہے لیکن اس کے باوجود کیربیئن کھلاڑی مختصر فارمیٹ کیلئے انتہائی خطرناک سمجھے جاتے ہیں ۔اس لئے اس ٹوئنٹی20سیریزمیں پاکستان کو کلی طورپر فیورٹ قرار دینا آسان نہیں ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں:  شاہدآفریدی کے قائم کردہ 100+ عالمی و قومی ریکارڈز

چار میچوں کی اس ٹوئنٹی20سیریزمیں پاکستان کو اپنی رینکنگ بہتربنانے کا نمایاں موقع موجودہے کیونکہ سیریزکا پہلا میچ جیتتے ہی وہ ورلڈچیمپئن ٹیم کو اُن کے دیس میں ہرانے کا صلہ آئی سی سی ٹوئنٹی20 رینکنگ میں ایک جست میں دو درجے ترقی کی صورت میں پالے گی اور ویسٹ انڈیزکو اُن کی جگہ چھٹے نمبرپر جانا پڑے گا جبکہ اگر پاکستان ٹیم فتوحات کاسلسلہ آخری میچ تک برقرار رکھتے ہوئے 4-0 سے کلین سوئپ کرنے میں کامیاب ہوجاتی ہے تو وہ سیریزکا خاتمہ عالمی نمبر3ٹیم کے طورپر کرے گی۔

اس صورت میں صرف بھارت اور نیوزی لینڈکی ٹیمیں ہی اُس سے آگے ہوں گی۔ورلڈ چیمپئن ویسٹ انڈیزکو اپنے میدانوں پر سیریزکے چاروں میچوں میں شکست کا خمیازہ چار درجے تنزلی کی صورت میں بھگتنا پڑسکتاہے، اس صورت میں وہ 108پوائنٹس کے ساتھ ساتویں نمبرپر چلی جائیگی۔

اگر پاکستان ٹیم سیریزمیں ایک شکست کے بدلے دیگر تینوں میچز جیت کر سیریز3-1 سے اپنے نام کرلیتی ہے تب بھی وہ دو درجے ترقی پاکرچوتھی پوزیشن کی مالک بن جائیگی جبکہ دودرجے نیچے پھسلنے کے بعد وہ چھٹے نمبرپر چلی جائیگی۔سیریزکی2-2سے برابری کی صورت میں دونوں ٹیموں کی رینکنگ یا پوائنٹس پر کوئی فرق نہیں پڑے گا۔

اگرویسٹ انڈیز ٹیم سیریزمیں 3-1 سے فتح حاصل کرلیتی ہے تو وہ ایک درجہ ترقی پاکر جنوبی افریقہ سے تیسری پوزیشن چھین لے گی تاہم دوپوائنٹس کھونے کے باوجود پاکستان کی چھٹی پوزیشن محفوظ رہے گی کیونکہ اس صورت میںبھی اُسے عالمی نمبر7 آسٹریلیا سے ابھی ایک پوائنٹ کی برتری حاصل ہوگی۔

البتہ 0-4کے کلین سوئپ سے دوچار ہونے کی صورت میں پاکستان ٹیم اپنی چھٹی پوزیشن سے بھی ہاتھ دھو بیٹھے گی جبکہ کلین سوئپ کی’انہونی‘ویسٹ انڈیزکو عالمی نمبر2 بھارت کے انتہائی قریب تر کردے گی جہاں دونوں کے درمیان فاصلہ صرف ایک پوائنٹ رہ جائے گا۔

جس روزپاکستان اور ویسٹ انڈیزکے درمیان چار ٹوئنٹی20میچوں کی سیریزکا اختتام ہورہا ہوگا،عین اُسی روز میزبان سری لنکا اور بنگلہ دیش کے درمیان دو ٹوئنٹی20میچوں کی سیریزکا آغاز ہوگا۔

اگر پاکستان اور ویسٹ انڈیزکے درمیان چار ٹوئنٹی20 میچوں کی سیریز میں پاکستان کو 3-1 سے فتح کے نتیجے کو ’فرض‘کرتے ہوئے بنگلہ دیش اور سری لنکاکی دوٹوئنٹی 20میچوں کی سیریزکے ممکنہ نتائج پر نگاہ ڈالیں توسیریزکاکوئی بھی نتیجہ رینکنگ ٹیبل پراثراندازنہیں ہوگا نہ ہی میزبان ٹیم کے کلین سوئپ کرنے کی صورت میں اور نہ ہی مہمان ٹیم کی 2-0 سے جیت کی’انہونی‘ ٹیموں کی مجموعی درجہ بندی پر اثر اندازہوگی البتہ پوائنٹس میں ردوبدل ہوگا جس کا ٹیموں کی پوزیشنز پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔

آنے والے ہفتے میں کھیلی جانے والی دو ون ڈے سیریز (سری لنکا بمقابلہ بنگلہ دیش اور ویسٹ انڈیز بمقابلہ پاکستان) کے تمام ممکنہ نتائج کے ٹیموں خصوصاً 7سے9پوزیشنز کی حامل بنگلہ دیش،پاکستان اور ویسٹ انڈیزکی رینکنگ پر پڑنے والے تمام ممکنہ اثرات کا تفصیلی جائزہ آپ ’اسپورٹس لنک‘ کے تازہ ایڈیشن میں ملاحظہ کرسکیں گے۔

loading...

یہ متعلقہ مواد بھی پڑھیں

پاکستان بمقابلہ ویسٹ انڈیز،کون کتنا بھاری؟

پاکستان کرکٹ ٹیم 26مارچ( اتوار) سے ویسٹ انڈیزکے خلاف چارٹوئنٹی20میچوں کی سیریزکا آغاز بارباڈوس کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے