Clicky

ہوم / آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی 2017ء / چیمپئنز ٹرافی کے بائیکاٹ کا بھارتی ڈرامہ بھی فلاپ

چیمپئنز ٹرافی کے بائیکاٹ کا بھارتی ڈرامہ بھی فلاپ

آئی سی سی اجلاس میں بگ تھری اور ریونیو اصلاحات میں اکیلے رہ جانے والے بھارتی بورڈ کا آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی کے بائیکاٹ کا ڈرامہ بھی فلاپ ہونے لگاہے کیونکہ بھارتی آفیشلز نے یکسر مختلف بیانات سے واضح ہوچکاہے کہ بھارتی بورڈ کبھی بھی ایونٹ کا بائیکاٹ نہیں کرے گا۔

واضح رہے کہ بگ تھری اور ریوینیوکی تقسیم کے معاملے میں اپنا موقف منوانے کیلئے بھارتی بورڈ نے آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی 2017ء کے بائیکاٹ کا شوشہ چھوڑا تھا۔اس بارے میں اپنی’’ جعلی سنجیدگی‘‘ دکھانے کیلئے اُس نے25اپریل کی ڈیڈلائن گزرجانے کے باوجود چیمپئنزٹرافی کیلئے اپنے اسکواڈکا اعلان نہیں کیاحالانکہ ایونٹ میں شریک دیگر ساتوں ممالک اپنے اسکواڈکا اعلان کرچکے ہیں۔

اسکواڈکا اعلان نہ کرکے بھارتی بورڈ یہ تاثر قائم کرنا اور آئی سی سی پر دبائو ڈالنا چاہتاتھا کہ اگر آئی سی سی اجلاس میں اُس کا ’’من پسند‘‘فیصلہ نہ ہوا تو وہ ایونٹ میں شرکت نہیں کرے گا تاہم اجلاس میں بدترین شکست کے بعد بھارتی بورڈکے غبارے سے ہوانکل گئی ہے جس نے اب اپنے اسکواڈکے اعلان میں تاخیرکیلئے مختلف تاویلیں دینا شروع کردی ہیں۔ جس سے اندازہ لگانامشکل نہیں کہ ایک دوروز میں بھارتی بورڈاپنے اسکواڈ کا اعلان کردے گا۔

یہ بھی پڑھیں:  چیمپئنزٹرافی نہ کھیلی تو بھارت 2023ء تک تمام گلوبل ایونٹ سے باہر

اب بھارتی بورڈکے ایک ٹاپ آفیشل نے ڈیڈلائن تک اسکواڈکا اعلان نہ کرنے کا سبب تکنیکی وجوہات بتائی ہیں ،آفیشل کا کہناتھا کہ قائم مقام سیکریٹری امیتابھ چوہدری اور چیف ایگزیکٹو راہول جوہری آئی سی سی میٹنگ میں شرکت کیلئے دبئی گئے ہوئے تھے جبکہ کپتان ویرات کوہلی آئی پی ایل کھیلنے میں مصروف تھے ۔اس لئے اسکواڈکی منظوری کیلئے سب ایک ساتھ جمع نہ ہوسکے جس کے سبب اسکواڈ کا اعلان کرنے میں تاخیر ہوگئی۔

بھارتی بورڈکا یہ دعویٰ انتہائی حیران کن اور مضحکہ خیز ہے ۔سوال یہ پیداہوتاہے کہ کیا آئی سی سی میٹنگ میں صرف بھارت کے حکام شریک تھے، آج کے جدیددورمیں دیگر ممالک کے ٹاپ آفیشلز نے بھی اپنے اپنے اسکواڈمنظور کئے۔پاکستان کی مثال سب کے سامنے ہے جس کے ون ڈے کپتان ویسٹ انڈیز، چیف سلیکٹرپاکستان میں جبکہ چیئرمین دبئی میں موجود تھے مگر اس کے باوجود اسکواڈکے اعلان میں تاخیرنہیں ہوئی۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکرہے کہ دولت کے پیچھے بھاگنے والے بھارتی بورڈ کیلئے آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی کابائیکاٹ کرنا عملی طورپربھی ممکن نہیں ہے کیونکہ ممبرملک کی شرکت کے معائدے کے تحت اگر بھارتی بورڈ یکم جون سے شروع ہونے والی چیمپئنز ٹرافی کا بائیکاٹ کرتاہے تو 2023ء تک شیڈول آئی سی سی کے تمام گلوبل ایونٹ سے بھی باہر ہوجائے گا۔

loading...

یہ متعلقہ مواد بھی پڑھیں

چیمپئنز ٹرافی کا اہم ریکارڈشاہدآفریدی کے نام

آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی 2017ء کی آمد آمد ہے۔اس حوالے سے قارئین کویہ جان …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے