Clicky

ہوم / ممالک / آسٹریلیا / 11رنزکے عوض7وکٹیں، بھارتی ٹیم کی بدترین رُسوائی

11رنزکے عوض7وکٹیں، بھارتی ٹیم کی بدترین رُسوائی

پونے میں کھیلے جارہے پہلے ٹیسٹ میچ کے دوسرے روز بھارتی ٹیم نے اپنی آخری سات وکٹیں صرف سات رنزکے عوض گنوادیںجو اُن کا آخری سات وکٹوں گرنے کے بدلے بننے والے کم ترین رنزہیں۔

بھارتی ٹیم کو اس سے قبل اس قدر بدترین صورتحال کا کبھی سامنا نہیں کرنا پڑاتھا۔اس اننگزمیں ایک موقع پر94/3کی صورتحال پر کھیلنے والی بھارتی ٹیم 48گیندوں کے دوران بقیہ ساتوں وکٹیں گنواکر 105رنزپرآل آئوٹ ہوگئی۔اس سے قبل بھارت کا آخری سات وکٹوں پر بننے والے کم سے کم رنز18تھے جو اُس کے بلے بازوں نے 1989/90ء میں کرائسٹ چرچ کے مقام پر میزبان نیوزی لینڈ کے خلاف بنائے تھے۔

علاوہ ازیں یہ مجموعی طورپر چھٹاواقعہ تھا جب بھارتی ٹیم آخری سات وکٹوں پر 25رنزکابھی اضافہ نہ کرسکی۔اس سے قبل اُسے آخری بار اس صورتحال کا سامنا 2011ء میں انگلینڈکے خلاف اوول کے مقام پرکرناپڑاتھا جب اُس کے آخری سات بلے باز مجموعی اسکورمیں صرف21رنزکاہی اضافہ کرسکے تھے۔

واضح رہے کہ مجموعی ٹیسٹ کرکٹ میں آخری سات وکٹوں پر بننے والے کم ترین رنز 5ہیں اورتاریخ میں ایسی بدترین بیٹنگ کے واقعے ایک نہیں بلکہ تین بار رونماہوچکے ہیں۔سب سے پہلے1946ء میں ویلنگٹن کے مقام پر نیوزی لینڈکی ٹیم میچ کی پہلی اننگزمیں صرف5رنز پر ڈھیر ہوئی تھی جس میں اُن کا کوئی بلے باز2سے زائد رنزکی اننگز نہیں کھیل سکاتھا۔

اس طرح 1979ء میں آسٹریلوی ٹیم پاکستان کے خلاف ملبورن ٹیسٹ جبکہ 2001ء میں کیوی ٹیم پاکستان کے ہی کے خلاف آکلینڈ ٹیسٹ میں اس صورتحال سے دوچار ہوئی تھی۔

ہرہفتے کھیلے جانے والے میچوں میں بننے اور ٹوٹنے والے ریکارڈزکی تفصیل ’اسپورٹس لنک‘میں ملاحظہ کریں

loading...

یہ متعلقہ مواد بھی پڑھیں

اسمتھ کی ففٹی نے آسٹریلیاکی برتری 298کردی

آسٹریلیا اور بھارت کے درمیان پونے میں کھیلے جارہے پہلے ٹیسٹ کے دوسرے روز مہمان …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے