Clicky

ہوم / اہم موضوعات / کس عمر کے پاکستانی بیٹسمین اچھا کھیلتے ہیں؟

کس عمر کے پاکستانی بیٹسمین اچھا کھیلتے ہیں؟

پاکستان کرکٹ ٹیم میں ان دنوں مصباح الحق اور یونس خان کی عمر پرکافی باتیں اور بحث ہورہی ہے۔ پاکستان میں کھیلوں کے سرفہرست میگزین ’’ اسپورٹس لنک‘‘ نے اپنے تازہ ایڈیشن میں پاکستان ٹیم کی حالیہ دورۂ آسٹریلیامیں ٹیسٹ سیریز اور مصباح الحق پرکارکردگی کے حوالے سے اندھی تنقید کے خلاف خصوصی مضمون شائع کیا ہے جس کا کچھ حصہ ’’کرکٹ اُردو‘‘کے قارئین کیلئے یہاں پیش کیاجارہاہے۔

سوچ بدل دینے والے اس مضمون کا صرف ایک حصہ یہاں شائع کیا گیاہے جبکہ یہ مکمل مضمون آپ ’اسپورٹس لنک‘ میں ملاحظہ کرسکتے ہیں۔

جہاں تک مصباح الحق کی عمرکی بات ہے کہ ایسے ’بڑامعاملہ‘ بنانے کم ازکم یہ تو بتائیں ناں کہ 30 سے کم سال کے’’کاغذی نوجوانوں‘‘ کی پرفارمنس کا گراف کیاہے۔گزشتہ چھ سالوں کے دوران جن آٹھ پاکستانی بلے بازوں نے 40رنز فی اننگز سے زائد اوسط رنز کئے ہیں ، اُن میں اُن میں ماسوائے احمد شہزاد ( 25سال)اورسرفرازاحمد(29سال)کے،کوئی ایسا بلے باز نہیں ہے جس کی عمر30 سال سے کم ہوحتیٰ کہ اس عرصے کے تین ٹاپ بلے بازوں میں سے دو وہ ہیں جن کی عمر پرہی سب سے زیادہ باتیں ہورہی ہیں۔

گزشتہ چھ سالوں میں یونس خان اور مصباح الحق زیادہ اوسط سے رنز بنانے والے ٹاپ 3 بلے بازوں میں شامل ہیں
گزشتہ چھ سالوں میں یونس خان اور مصباح الحق زیادہ اوسط سے رنز بنانے والے ٹاپ 3 بلے بازوں میں شامل ہیں

ان چھ سالوں میں39 سالہ یونس خان 50 سے زائد اوسط سے رنزبنانے والے واحد پاکستانی بیٹسمین ہیں جنہوں نے 17 سنچریوں سمیت 57.13کی اوسط سے رنز کئے ہیں جبکہ جس کپتان کو ’’بابائے کرکٹ‘‘ کے القاب دئیے جارہے ہیں

اُسی42سالہ مصباح الحق نے 48.81رنزکی اوسط سے رنز کئے ہیںجبکہ اُنہوں نے ان چھ سالوں میں 61بار گیند فضائی راستے سے بائونڈری لائن کے باہر پھینکی ہے جو اس عرصے میں نہ صرف کسی بھی پاکستانی بلے بازکے سب سے زیادہ چھکے ہیں بلکہ محض برینڈن میکولم(67) کے بعد دُنیاکے کسی بھی بیٹسمین کے دوسرے زیادہ چھکے ہیں جبکہ 41چھکوں کے ساتھ اس فہرست میں چوتھے نمبرپر کھڑے یونس خان نوجوانوں کا منہ چڑا رہے ہیں۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکرہے کہ گزشتہ چھ سالوں کے دوران ٹیسٹ کرکٹ میں اپنے ملک سے باہر زیادہ چھکے لگانے والے ٹاپ5بلے بازوں میںسے چار کا تعلق پاکستان سے ہے اور سبھی30سال سے زائد عمرکے ہیں جن میں مصباح الحق،یونس خان، محمد حفیظ اور اسد شفیق شامل ہیں جبکہ برینڈن میکولم،کیون پیٹرسن اور ڈیوڈوارنرجیسے بلے بازوں کو بھی 20،20 چھکوں پر اکتفاکرنا پڑاہے۔

In which age, Pakistani batsmen perform well

عمراورکارکردگی کی بحث سے قطع نظرحالیہ جس سیریزپرپاکستان ٹیم کو تنقید کا نشانہ بنایا جارہاہے ، اسی سیریزمیں پاکستانی بیٹسمینوں نے وہ کارنامے سرانجام دئیے ہیں جو اس سے قبل کسی بھی دورکی پاکستانی ٹیم نے آسٹریلیامیں سرانجام نہیں دئیے تھے یا پھر شاذونادر ہی ایسی پرفارمنس دُہرائی جاسکی تھی جو ذیل میں آپ کی خدمت میںپیش کی جارہی ہیں۔

حالیہ دورۂ آسٹریلیامیں پاکستانی ٹیم کی منفردپرفارمنس:

  • یہ1983/84ء کے بعدمحض پہلا موقع تھا جب پاکستان ٹیم نے ایک دورۂ آسٹریلیا میں دو بار400+رنزکے مجموعی اسکوربنائے۔
  • یہ پہلا موقع تھاجب کسی پاکستانی بیٹسمین نے آسٹریلوی سرزمین پر ڈبل سنچری اسکور کرنے کا اعزاز حاصل کیاجو اظہرعلی نے ملبورن میں205*رنزکی اننگزکھیل کر بنایااور دوسرا بہترین اسکور175رنزبھی اسی سیریزکے دوران یونس خان نے سڈنی ٹیسٹ میں بنایا۔
  • حالیہ سیریزمیں چند چھوٹے اسکورزکے باوجود پاکستان ٹیم کی مجموعی بیٹنگ اوسط 29.01رہی جو آسٹریلیامیں ایک سے زائد ٹیسٹ سیریزمیں پاکستان کی ٹاپ3 اوسط میں سے ایک ہے۔واضح رہے کہ پاکستانی بلے بازکینگروزکے دیس میں کسی بھی سیریزمیں اپنی اوسط 30رنز فی اننگز تک نہیں پہنچاسکے۔
  • حالیہ ٹیسٹ سیریزمیں پاکستانی بلے بازوں نے 15چھکے لگائے جو آسٹریلیامیں کھیلی گئی کسی بھی سیریزمیں پاکستانی بلے بازوں کے سب سے زیادہ چھکے ہیں،اس سے قبل انہوں نے 2005ء کی سیریزمیںسب سے زیادہ 12چھکے لگائے تھے۔
  • حالیہ سیریزمیں پاکستانی بلے بازوںنے 49.94کے اسٹرائک ریٹ سے رنز کئے جو 1999ء کے ٹورمیں 51.44کے بعد کسی بھی دورۂ آسٹریلیامیں پاکستانی بلے بازوں کا دوسرا بہترین مجموعی اسکورنگ ریٹ ہے۔
  • azhar-ali
    حالیہ دورہ آسٹریلیا میں 30 سال سے زائد عمر کے اظہرعلی ہی کینگروز کے دیس میں ڈبل سنچری بنانے والے پہلے پاکستانی بلے باز بنے
  • حالیہ ٹورمیں پاکستانی اوپنرزکی بیٹنگ اوسط 45.27رہی جو آسٹریلیامیں کھیلی گئی کسی بھی ٹیسٹ سیریزمیں پاکستانی اوپنرزکی بہترین مجموعی اوسط ہے جبکہ ا س سے قبل صرف ایک ہی بار(1972ء میں) پاکستانی اوپنرزکی اوسط40کی حد پارکرپائی تھی ۔
  • یہ1979ء کے بعد پہلا موقع تھاجب کسی پاکستانی بیٹسمین نے آسٹریلیامیںچھٹے نمبرپر کھیلتے ہوئے سنچری اسکورکی،یہ کارنامہ اسدشفیق نے 137رنزبناکرسرانجام دیا۔
  • سرفرازاحمد نے آسٹریلیامیں بطورپاکستانی وکٹ کیپرآسٹریلیا میں سب سے بڑی انفرادی اننگز(72*رنز)کھیلنے کا وسیم باری کا1972ء میں قائم کردہ ریکارڈ برابرکیا۔

نوٹ یہ چند پیراگراف ’اسپورٹس لنک‘ میں شائع ہونے والے مضمون ’’ مصباح پراندھی تنقیداوریکسر مختلف حقائق‘‘ سے لئے گئے ہیں

loading...

یہ متعلقہ مواد بھی پڑھیں

تازہ رینکنگ جاری،مصباح الحق اور بابراعظم کی ترقی

پاکستان اور ویسٹ انڈیزکے درمیان کنگسٹن میں کھیلے گئے پہلے ٹیسٹ میچ کے اختتام پر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے